108

فضاء میں‌پھیلی دھند عام دھند نہیں، ذہریلی دھند ہے. شہری احتیاط کریں، ڈاکٹر

فضاء میں پھیلی، زہریلی دھند نے شہریوں کا سانس لینا بھی دو بھر کر دیا. آنکھوں میں شدید چھبن سے شہری پریشان. دن بھر موٹروے بھی بند رکھنی پڑی.
پاکستان میں، لاہور ، سرگودھا، کوٹ مومن اور شیخو پورہ اور انڈیا میں نئی دلی میں سردیوں کی آمد کے ساتھ ہی عجیب قسم کی دھند نما کہر نے، اور فضائی آلودگی اور گردوغبار نے مل کر لاہور سمیت پورے پنجاب کو اپنی لپیٹ میں لے لیا. جس سے شہریوں کو آنکھوں میں شدید چبھن سے آنکھوں سے پانی کا آنا، اور سر میں درد کی شکایت رہی.
موسم کی صورت حال شدید خراب رہی. جس کے باعث ڈاکروں سے اس کی وجہ اور حل کی رپورٹ مانگی گئی.
چیف میٹرولوجسٹ جناب محمد ریاض صاحب کا کہنا تھا کہ فضائی آلودگی اور ڈرائی میل مل کر بہت شدت اختیار کر چکا ہے جس کی وجہ سے پوری فضاء آلودہ ہو چکی ہے. اس کا حل صرف بارش میں ہی ہے، اور بارش کے ابھی کوی امکان نہیں ہیں. جب تک بارش نا ہو گی، موسم ایسا رہ سکتا ہے، یہ صحت کے لیے بہت نقصان دہ ہے. انھوں نے مزید کہا کہ، مریض حضرات بہت احتیاط کریں. سانس کے مریض ماسک کا استعمال کریں. عام شہری بھی چشمہ لگا کر ہی باہر نکلیں.
مزید ہے کہ اس پر وزیراعظم نے وزیراعلٰی سے رپورٹ بھی طلب کر لی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں