36

83 لاکھ سال پرانے ٹائیگر کی سب سے بڑی کھوپڑی کی چین سے دریافت

دنیا سے ناپید ہو جانے والے ٹائیگرز میں‌سے ایک بہت بڑے سائز کے ٹائیگر کی 83 لاکھ سال پرانی کھوپڑی چین کے شہر شنگھائی میں دریافت ہوئی ہے. اس کھوپڑی کی لمبائی 40 سینٹی میٹر ہے، اگر کھوپڑی کے لحاظ سے ٹائیگر کے وزن کا حساب لگایا جائے تو، اس ٹائیگر کا وزن 892 پاوںڈ اور لمبائی تقریباََ 3 میٹر سے زیادہ بنتی ہے. یعنی کے آج کے دور پرفانی علاقوں میں پائے جانے ریچھ سے بھی بڑا تھا. اس کے نوکیلے لمنے دانت اس کے منہ سے باہر نکلے ہوئے تھے جو کہ اسے خطرناک بناتے تھے. لیکن اس کے منہ کا دہانہ بہت چھوٹا ہے، جس کے مطابق، اس کا منہ صرف 70 ڈگری تک کی کھل پاتا ہوگا. اس لیے یہ بھی کہا جا سکتا ہے کہ ہی صرف چھوٹے جانوروں کا ہی شکار کرتا ہوگا. برفانی ریچھوں میں بڑے ریچھ سیبر ٹوتھد سے بھی اس کا سر بڑا ہے. ماہرین کے مطابق اس ٹائیگر کے سر کی دریافت سے اس پر کام کرنے والے سائنسدانوں کو بہت مدد ملے گی. اس ٹائیگر کو کیکروؤڈس ہوریبلس کا نام دیا گیا ہے. سائینسدانوں کے مطابق اس کے شانے 1.3 میٹر اونچے تھے اور دم سے سر تک کا فاصلہ 3.1 میٹر تھا، اپنے نوکیلے دانتوں کی بنا پر ہی تیندوؤں سے بھی کافی مشابہت رکھتا ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں