torch1 35

کیا روشنی سے آگ لگانا ممکن ہو گیا؟ آگ لگانے والی ٹارچ تیار.

شنگھائی شہر جو کہ جدید ٹیکنالوجی کے لیے بہت مشہور ہے، میں لیزر آلات بنانے والی ایک بڑی کمپنی نےایک ایسی جدید ٹارچ تیار کی ہے جو ایک طرف تو طاقتور روشنی بھی فراہم کرتی ہے اور دوسری طرف کسی بھی چیز کو آگ بھی لگاسکتی ہے جبکہ ٹارچ کی اوپری سطح پر برتن رکھ کر انڈے وغیرہ بھی فرئی کیے جاسکتے ہیں۔

ٹارچ کو ایک بڑی چائنیز کمپنی نے تیار کیا ہے اور اس کا نام فلیش ٹارچ منی فلیش لائٹ رکھا گیا ہے۔ یہ 2300 لیومن پاور کی حامل ہیلوجن لائٹ ہے جو آگ بھی بھڑکاسکتی ہے۔ ٹارچ میں شامل ٹیکنالوجیز میں، ہوائی جہاز کے انجن میں استعمال ہونے والا ایک المونیم لگایا گیا ہے اور اس کا لینز اور ریفلیکٹر کبھی گرمی سے خراب نہیں ہوتا۔ تھوڑی ہی دیر ٹارچ کو کسی بھی جلنے والی شے کے پاس لایا جائے تو وہ چند سیکنڈ دھواں دینے کے بعد بھڑک جاتی ہے۔ پھر اس ٹارچ کے اوپر براہِ راست چھوٹا برتن رکھ کرانڈہ بھی تلا جاسکتا ہے لیکن ایک اہم بات ہے کہ اس کی حرارت پلاسٹک کو پگھلا بھی سکتی ہے۔ اس لیے اہتیاط ضروری ہے.

فلیش ٹارچ ایک مِنی ایک سو چھوٹے سائز کے بلبوں کے برابر روشنی دیتی ہے۔ اس کی لمبائی صرف اور صرف 8 انچ اور وزن بس 385 گرام ہے۔ لیکن اس کا چھوٹا ورژن بھی بنایا گیا ہے جو اس سے آدھا ہے. جسے فلیش ٹارچ مِنی کا نام دی دیا گیا ہے۔ اس میں روشنی کی شدت کے لحاظ سے 3 آپشنز ہیں اور پورے پاور پر یہ ایک گھنٹہ تک مکمل چل سکتی ہے جب کہ کم ترین شدت پر زیادہ سے زیادہ 100 منٹ تک روشنی دیتی رہتی ہے۔ اس کو چارجنگ کرنے کے لیے ایک بیٹری پیک بھی مارکیٹ میں دیا گیا ہے۔ ٹارچ کی سٹارٹنگ قیمت 20 ہزار روپے رکھی گئی ہے جس سے پتا چلتا ہے کی یہ ایک مہنگی چیز ہے۔
کمپنی کو امید ہے کے یہ ٹارچ بہت مشہور ہونے والی ہے. اور صارفین اسے استعمال کر کے بہت مطمعن ہوں گے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں