38

خطے میں‌امن کے قیام کے لیے انڈیا اور پاکستان کو مل بیٹھ کر کشمیر کے مسئلے کا حل تلاش کرنا ہوگا. برطانوی وزیرخارجہ

برطانوی وزیر خارجہ اسلام آباد تشریف لائے، جہاں سرتاج عزیز نے انہیں خوش آمدید کیا، اور ان سے ملاقات کی، اس ملاقات میں برطانوی وزیرخارجہ بوس جانسن کا کہنا تھا کہ ہم پاکستان اور بھارت کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں کہ، وہ مل کر مسئلہ کشمیر کا حل ڈھونڈیں اور امن کا طرقہ اپناتے ہوئے اس مسئلے کو ختم کریں.
مشیر خارجہ سرتاج عزیز کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے بورس جانسن کا کہنا تھا کہ، انھیں پاکستان آ کر بہت خوشی ہو رہی ہے، برطانیہ کی 2 فیصدی آبادی پاکستانی ہے، اور ویسے بھی پاکستان خطے کا انتہائی اہم ملک ہے. ان کا کہنا تھا کہ برطانیہ پاکستان کے ساتھ تجارتی روابط کو فروغ دینا چاہتا ہے، پاکستان تیزی سے تجارتی طور پر ترقی کر رہا ہے.انھوں نے مزید کہا کہ، ہمیں مل کر پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر کے مسئلے پر بات کرنا ہوگی. اس مسئلے کو حل کیا جا سکتا ہے، اور وہ اس مسئلے کے حل کے مزاکرات کے لیے پاکستان اور بھارت کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں. سکیورٹی کے معاملات کے لیے وہ پاکستان کے ساتھ ہیں، کیونکہ پاکستان نے دہشت گردی پر اپنے زوربازو پر گرفت کی ہے، اور پاکستان کی اس معاملے میں قربانیاں سب کے سامنے ہیں.
سرتاج عزیز نے برطانوی وزیر خارجہ کو خوش آمدید کیا اور انھیں ایل او سی پر بریف کیا اور کشمیر کی صورتحال پر بحث کی گئی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں