57

گوشت کے پیکٹ میں لال محلول خون نہیں ہوتا-سما نیوز


IMG_2423

لاس اینجلس : کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ بند پیکٹ میں گوشت کے ساتھ تیرتا سرخ پانی ہے یا خون ؟؟ جی ہاں نئی تحقیقات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ گوشت کے بند پیکٹ میں موجود لال محلول دراصل خون نہیں بلکہ پروٹین کا ایک خاص کیمیا میو گلوبن ہوتا ہے۔

غیر ملکی سرچ انجن ایم ایس این کی جاری کردہ نئی رپورٹ کے مطابق اگر گوشت کی دکانوں میں سجے سنورے گوشت کے پیکٹ میں تیرتا لال محلول دراصل خون نہیں ہوتا ہے۔ بڑی تعداد میں لوگ اس سرخ  محلول کو خون سے تشبہہ دیتے ہیں، تاہم یہ خون نہیں بلکہ ایک قسم کا پروٹین ہوتا ہے، جسے میوگلوبن کہا جاتا ہے۔

DSC01757

پروٹین میں شامل یہ سرخ محلول گوشت اور اس سے نکلتے جوس کو سرخ رنگ دیتا ہے، جس پر اسے دیکھ کر خون کا گمان ہوتا ہے، یہ محلول عام پر تمام پیکٹس میں نظر آتا ہے۔

20160312_191651

ہمارے خون میں موجود ہیموگلوبن کی طرح میوگلوبن بھی جانوروں کے مسلز تک آکسیجن پہنچانے کا کام سرانجام دیتا ہے،یہ ہی وجہ ہے کہ گوشت ہوا یا گرم جگہ زیادہ دیر رہنے کے باعث اس کا رنگ سرخ سے کتھئی (براؤن) ہوجاتا ہے۔

f7d38ae3cffaefc5aab194c6f3a6e479

ماہرین صحت کے مطابق گوشت سے نکلتا سرخ محلول صحت کیلئے نقصان دہ نہیں۔ سماء

View Source
کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں