22

امریکا میں مساجد کو مسلمانوں کے خلاف مغلظات آمیز اور دھمکی سے بھر پور خط موصول

واشنگنٹن: امریکی خبر رساں ادارے کے مطابق، امریکی ریاست کیلیفورنیا کی تین مساجد میں خط موصول ہوئے، جو کہ نفرت اور دھمکی آمیز تھے. خط میں‌ مسلمانوں کے خلاف مغلظات بکی گئی ہیں اور مسلمانوں کو شیطان قرار دیتے ہوئے اپنا سامان باندھ کر امریکا چھوڑ دینے کا کہا گیا ہے.
کیلیفورنیا کے علاقے سان ہوزے میں‌واقع تین مساجد میں یہ دھمکی آمیز خط موصول ہوئے. ان خطوط میں واضح لکھا گیا کہ مسلمان امریکا چھوڑ دیں. نا چھوڑنے کی صورت میں امریکی مسلمانوں کے ساتھ وہی سلوک کیا جائےگا جو ہٹلر نے کئ عشرے پہلے یہودیوں کے ساتھ کیا تھا، یعنی کے قتل عام کیا جائے گا. خط میں یہ بھی لکھا گیا کہ مسلمانوں کے لیے بہتر ہوگا کہ وہ اپنا بوریا بستر باندھ کر پر امن طریقے سے امریکا چھوڑ دیں، ورنہ بہت برا ہوگا. خط کے آخر میں صدر ٹرمپ زندہ باد بھی لکھا گیا، جو کہ اس بات کا اشارہ ہے کہ یہ لوگ صدر ٹرمپ کے چاہنے والے اور ان کے حامی ہیں.
لاس اینجلس میں واقع (سی اے آئی آر) یعنی کونسل فار امریکن اسلامک ریلیشنز کے ایگزیکٹو ڈائرکٹر نے ان خطوط کی بھرپور مزمت کی اور کہا کہ صدر ٹرمپ کے مسلمانوں کے خلاف بیانات نے ایسے واقعات کو جنم دیا ہے، اگرچہ صدر ٹرمپ اب ایسے لوگوں سے لاتعلقی کا اعلان کر رہے ہیں،مگر ان کو چاہیے کہ وہ خود کو تمام امریکیوں کا صدر ثابت کریں. سان ہوزے کے پولیس ڈیپارٹمنٹ نے اس واقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں، پولیس ترجمان کے مطابق، یہ ایک نفرت آمیز سانحہ ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں